حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا بتایا ہوا قرض اتارنے کا خاص عمل

آج آپ لوگوں کے لیے قرض اتارنے کا آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا بتایا ہوا عمل لے کر حاضر ہوا ہوں۔ حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں۔ ایک مرتبہ میں نماز جمعہ حضور اقدس صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اقتدار میں نہ پڑھ سکا۔

آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا معاذ نماز جمعہ میں کیوں نہیں آئے؟ میں نے عرض کی یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم میرے ذمے یوحنا بن باریہ نامی یہودی کا ایک تولہ سونا قرض تھا۔ وہ میرے دروازے پر میری ساک میں تھا۔ اور مجھے خدشہ ہوا کہ مجھے کہیں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم تک پہنچنے سے روک ہی نہ دے۔

وہ کافی دیر تک میرے دروازے کے باہر رہا اور جمعہ کی حاضری سے محروم رہا۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا اے معاذ تم چاہتے ہو کہ اللہ تعالی تمہارے قرض کی ادائیگی کی کوئی سورت بنا دے۔ عرض کی جی ہاں تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا۔ سورۃ آل عمران کی چھبیس اور ستائیس نمبر آیت پڑھ لیا کرو۔ وہ آیت ایک بار سن لیں۔

بسم اللہ الرحمن الرحیم قلم ہمارے دل میں زمین بھر سونا بھی قرض ہو تو اللہ تعالی اس کی ادائیگی کی سبیل پیدا کر دے گا یہ عمل آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا بتایا ہوا عمل ہے آپ یہ وظیفہ ضرور اپنائیں انشاءاللہ آپ کو فائدہ ہوگا.

Scroll to Top